وفات آیۃ اللہ العظمیٰ حسین دین محمدی زنجانی رحمۃ اللہ علیہ ۱۳۷۷؁ھ
چودہویں صدی کے نامور عالم و فقیہ آیۃ اللہ العظمیٰ حسین دین محمدی زنجانی رحمۃ اللہ علیہ زنجان کے ایک دیندار گھرانے میں پیدا ہوئے، آپ کے والد زنجان کے دیندار تاجر تھے۔ جب آپ بڑے ہوئے تو والد نے چاہا کہ آپ بھی تجارت کریں لیکن علم دین کے شوق نے آپ کو تجارت سے روک دیا ۔ ابتدائی تعلیم کے بعد مدرسہ نصر اللہ خان زنجان میں داخلہ لیا جہاں آیۃ اللہ میرزا ابراہیم حکمی زنجانی رحمۃ اللہ علیہ، آیۃ اللہ میرزا مجید حکمی رحمۃ اللہ علیہ، آیۃ اللہ میرزا ابراہیم ماہانی فقاہتی رحمۃ اللہ علیہ اور آیۃ اللہ ملا خلیل زنجانی رحمۃ اللہ علیہ سے کسب فیض کیا اور درجہ اجتہاد پر فائز ہوئے۔ اس کے بعد اپنے والد کے ہمراہ نجف اشرف تشریف لے گئے جہاںآیۃ اللہ العظمیٰ آخوند ملا کاظم خراسانی رحمۃ اللہ علیہ ، صاحب عروۃ الوثقیٰ آیۃ اللہ العظمیٰ سید محمدکاظم طباطبایی یزدی رحمۃ اللہ علیہ اور آیۃ اللہ العظمیٰ شیخ شریعت اصفہانی رحمۃ اللہ علیہ سے شرف تلمذ حاصل کیا اور ۱۳۳۲ ؁ ھ میں زنجان واپس آگئے۔
آپ کے شاگردوں کی طویل فہرست ہے، اسی طرح متعدد موضوعات پر کتابیں بھی تالیف و تصنیف فرمائی۔