اولاد کا غم آسان

            عالم تشیع کےنامور عالم و فقیہ اور مرجع تقلید آیۃ اللہ العظمیٰ میرزا ابوالقاسم المعروف بہ میرزائے قمی رضوان اللہ تعالیٰ علیہ سے بادشاہ وقت فتح علی شاہ قاجار نے مطالبہ کیا کہ اپنے بیٹے کی شادی اسکی بیٹی سے کر دیں اور اس رشتہ پر مجبور کیا تو میرزائے قمیؒ نے نماز شب سے قبل بارگاہ معبود میں دعا کی ’’خدایا! اگر  شہزادای کی شادی میرے بیٹے سے ہوناطے ہے تو میرے جوان کو اٹھا لے۔‘‘ اورنماز شب میں مشغول ہو گئے ابھی نماز تمام نہ ہو ئی تھی کہ بیٹے کا انتقال ہوگیا۔

            واضح رہے کہ میرزائے قمیؒ کے ۸ ؍ بیٹیاں اور صرف ایک وہی بیٹا تھا۔

            میرزائے قمی رضوان اللہ تعالیٰ علیہ کی وفات ۱۵ ؍ جمادی الثانی ۱۳۵۳؁ ھ کو قم مقدس میں ہوئی اورقبرستان شیخان میں انکا مزار ہے۔